Wednesday, August 03, 2005

اب تم سناؤ

ہماری بلڈنگ میں بھی کئی ایسی لڑکیاں ہیں جو دن بھر دفتروں میں نوکری کرنے کے بعد شام کو سیکس ورکر کی خدمات انجام دیتی ہیں ـ لفٹ میں پہچان والی ایک روسی لڑکی سے پوچھا کیا حال ہے؟ کہنے لگی: بہت برا حال ہے، بزنس ڈاؤن ہے اور اس گرمی میں گاہکوں کے پاس وقت مقررہ پہنچنا بہت مشکل ہے ـ اظہار ہمدردی میں نے اسے کہا گرمیوں میں کیونکر تکلیف اٹھاتی ہو ـ جواب میں کہنے لگی: کیا کروں فلیٹ کا کرایہ اتنا کہ آسمان سے باتیں کرے اوپر سے اسپانسر آدھی سے زیادہ رقم اینٹھ لیتا ہے اور وہاں روس میں میری ماں اسوقت اسپتال میں داخل ہے ـ پندرہ سال کی عمر سے بہت ساری تکلیفیں جھیل چکی ہوں تو گرمی کیا چیز ہے ـ اب تم سناؤ کیا حال ہے ـ میں صرف مسکراکر لفٹ سے باہر آگیا کیونکہ آٹھواں فلور آچکا تھا اور وہ اپنے فلیٹ تیرھویں فلور جانے کیلئے لفٹ میں ہی رہ گئی ـ
Blogger iabhopal said...

آپ کی تحریروں سے لگتا ہے دبئی آج سے پینتیس سال پہلے والا بیروت بن چکا ہے ۔

میں نے جہانزیب اشرف صاحب کی مدد سے اپنے دونوں بلاگز کی ٹمپلیٹس میں ترمیم کر دی ہے ۔ اب دیکھ کر بتائیے کہ ٹھیک پڑھا جاتا ہے یا نہيں ۔

August 04, 2005 12:01 PM  
Blogger Shaima said...

im still trying to read ur page....

August 04, 2005 11:29 PM  
Anonymous Anonymous said...

nice blog. check out mine on sumaiyazabwala@blogspot.com

October 23, 2005 10:39 AM  

Post a Comment

ہندوستان سے پہلا اُردو بلاگ
First Urdu Blog from India

IndiBlogger - The Largest Indian Blogger Community

حالیہ تحریریں

اردو میل
آج تک
مونچھ والیاں
Links Page
جمیرا
دِل نے چاہا
دھماکوں کا موسم
شیطان
C-u-4-m.
برسات کا موسم

Hindi Blog

Urdu Graphic Blog

Motion Blog

Powered by ShoutJax

Counters