Monday, September 26, 2005

اسامہ سے اِک ملاقات

آخر آپ خلوت گاہ سے باہر کب آئیں گے؟ ’’پہلے امریکہ کو وعدہ کرنا چاہئے کہ ہمیں ایک عام شہری کی زندگی گذارنے کا موقع دیا جائے گا‘‘ آپ نے کبھی کھلم کھلا جہاد کیا ہے؟ ’’جی ہاں ـ اپنے ہی گھر والوں سے‘‘ سنا ہے آپ کے والد کی جائیداد کا حصہ آپ کو مل گیا ـ ’’ہرگز نہیں ـ میرا مطلب ہے جتنی امید تھی اتنا نہیں ملا‘‘ سوچئے اگر آپ امریکہ کے شہری ہوتے؟ ’’تو میں اسامہ بن لادن سے ہرگز نفرت نہیں کرتا‘‘ اپنے گروپ کے بارے میں کیا خیالات ہیں؟ ’’بہت ہی بہادر گروپ تھا، امریکہ کے غضب سے سب فرار ہیں‘‘ اپنے گروپ سے ابھی بھی رابطہ جاری ہے یا نہیں؟ ’’بہت مشکل ہے، ہماری آخری امید الجزیرہ پر بھی امریکہ نے پانی بھر دیا‘‘ مان لو کہ امریکہ نے عالمی اتفاق رائے سے آپ کو معاف کردیا ـ ’’تو امریکہ کیلئے میری جان قربان، میرے بچوں کو امریکی فوج میں بھرتی کردوں گا تاکہ وہ دنیا بھر میں موجود دہشت گردوں کے خلاف لڑ کر شہید ہوجائیں‘‘ اوہممم ـ ـ تو آپ نیک خیالات بھی رکھتے ہیں ـ ’’ کیا کریں؟ کھلی فضا میں سانس لینا چاہتا ہوں‘‘ کیا ایسا نہیں کرسکتے کہ پھر سے اپنے گروپ کو اور مضبوط بنالیں ـ ’’ایسا سوچنا بھی ممکن نہیں، پہلے کی بات الگ تھی ہمارے اندر جوش و جذبہ تھا ـ اب ہمارا گروپ پوری طرح بکھیر چکا ہے‘‘ اپنی فی الحال زندگی پر روشنی ڈالیں؟ ’’فی الحال بغیر روشنی کے کمرے میں زندگی گذار رہا ہوں‘‘ دنیا کے بیشتر لوگ سمجھتے ہیں کہ آپ مرچکے ہیں ـ ’’کاش امریکی فوج بھی یہی سمجھ لے‘‘ کیا آپ پوری زندگی چھپے پھرتے رہیں گے؟ ’’ہرگز نہیں ـ لیکن آثار یہی بتا رہے ہیں‘‘ مستقبل کے بارے میں کیا سوچا ہے؟ ’’روزانہ صبح سے شام تک یہی سوچ رہا ہوں‘‘ فی الحال آپ کی بیگمات اور بچوں کا کیا حال ہے؟ ’’وہ سب اپنے اپنے گھروں میں نظر بند ہیں‘‘ کیا آپ کو اپنی بیگمات کی یاد نہیں آتی؟ ’’فی الحال ہمارے ایک ساتھی نے انکی بہن سے ہماری شادی کا آفر دیا ہے‘‘ چلو چھوڑو ان سب باتوں کو، پہلے یہ بتاؤ کیا سوچ کر امریکہ کو لتاڑا تھا؟ ’’ہم نے؟؟ ہاہاہا ـ ـ ـ کیا مذاق ہے، بھلا ہم امریکہ کو کیسے لتاڑ سکتے ہیں؟ جی ہاں! آپ نے امریکہ کو لتاڑا پھر امریکی فوج نے آپ کے گروپ پر حملے کئے اور آج تک آپ کو دھونڈتی پھر رہی ہے ـ ’’جناب یہ سب میڈیا کی خبریں ہیں، دراصل ہم امریکہ کے غلام ہیں ـ اسی کے کہنے پر ہم نے ہتھیار اٹھائے، اسی کے کہنے پر جہاد کے نعرے لگائے، اسی کے کہنے پر دھمکی آمیز ویڈیو تیار کروائے ـ ہم نے جو بھی کیا سب امریکہ کے حکم پر کیا، اور یہ بھی اسی کا فرمان ہے کہ ہم روپوش رہیں‘‘ آپ یہ کیا کہہ رہے ہیں؟ کچھ سمجھ میں نہیں آیا ـ ’’آپ نہیں سمجھیں گے کیونکہ یہ سیاست ہے ـ عالمی سیاست‘‘
Blogger Danial said...

Shuaib your blog posts are totally invisible in firefox.

September 27, 2005 4:05 AM  
Blogger WiseSabre said...

بحرحال وہ جو کوئی بھی تھا بظاہر مظلوم ہی ہے۔
آگےخدا تہتر جانتا ہے۔

جب تک سچ ظاہر نہیں ہو جاتا ہم کیسے کسی کی مخالفت کر سکتےہیں؟

September 27, 2005 9:21 AM  
Anonymous Kashif said...

Al-Qaeda was an international drama staged by USA and appreciated by us.

September 27, 2005 10:37 AM  
Blogger SHUAIB said...

دانیال : میں ونڈوز کا ایکسپلولر استعمال کر رہا ہوں اور اسمیں میرا بلاگ صحیح نظر آ رہا ہے ۔ فائر فاکس کو میں نے کبھی استعمال نہیں کیا اور نہ ہی اسکی خصوصیات سے واقف ہوں ۔ بہتر ہے آپ ہی بتائیں کہ میں اپنی ٹملیٹ میں کیا تبدیلیاں کروں جس سے میرا بلاگ فائر فاکس میں ٹھیک نظر آسکے ۔

ڈیئر کاشف : بلاگ پر آپ کی آمد کا شکریہ ۔

September 27, 2005 11:00 PM  

Post a Comment